• Citizen Journalism Program

عزیزہ علی اور ان کی جدوجہد

یہ کہانی لیاری کی ایک ایسی با شعور اور حوصلہ مند خاتون کی ہے جو اس معاشرے کی دیگر خواتین ، بالخصوص نئی نسل کے لئے، ایک مثال قائم کر رہی ہیں۔ ان کا نام عزیزہ علی محمد ہے اور اِن کی عمر ۳۳ سال ہے۔


عزیزہ علی محمد کوبچپن سے ہی پڑھنے کا بہت شوق تھا، غریب گھرانے میں پیدا ہونے کی وجہ سے وہ اپنی پڑھائی پوری نہ کر سکیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ۱۸ سال کی عمر میں ان کے والدین نے ان کی شادی کر دی، شادی کے بعد بھی حالات بہتر نہ ہوسکے۔ ’’میرے شوہر کے پاس کبھی کام ہوتا تھا اور کبھی نہیں، تو اپنے شوہر کی مدد کی خاطر میں نے لوگوں کے گھروں میں جا کر کام کرنا شروع کیا‘‘۔


عزیزہ نے کہا کہ وہ اپنے بچوں کو اچھی تعلیم اور مستقبل دینا چاہتی تھیں ، لیکن حالات ایسے نہیں تھے کہ بچوں کو پرائیوٹ اسکول بھیج سکیں ۔لیکن انہوں نے یہ عزم کرلیا تھا کہ میں اپنے بچوں کو لازمی پڑھا ؤنگی۔


ایک دن عزیزہ کو کہیں سے چلڈرن کیفے کے بارے میں پتہ چلا تو انہوں نے وہاں کا رُخ کیا۔ " وہاں جا کر معلومات لیں تو پتہ چلا کہ نہ صرف میرے بچے بلکہ میں بھی وہاں مفت تعلیم حاصل کرسکتی ہوں۔اب چلڈرن کیفے میں میرے بچّےاور میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں اور اپنے بچوں کا مستقبل سنوارنے کے ساتھ میں اپنا بچپن کا خواب بھی پورا کر رہی ہوں "۔

عزیزہ نے کہا کہ لوگ مجھے اب بھی تنقید کا نشانہ بناتے ہیں لیکن میں نے ہمت نہیں ہارنی اور میں اپنی تعلیم مکمل کرونگی۔


نہیں تیرا نشیمن قصر سلطانی کے گنبد پر

تو شاہین ہے بسیرا کر پہاڑوں کی چٹانوں پر


Contributor: Shazia Ishaq

1 view

A Project by SIE in collaboration with KYI.

  • Facebook - White Circle
  • Twitter - White Circle
  • Instagram - White Circle