• Citizen Journalism Program

محنت کامیابی کی کُنجی ہے

یہ کہانی موسیٰ لین لیاری کی رہائشی مس فرح ادیبہ کی ہے۔مس فرح ادیبہ رونق اسلام کالج میں لیکچرار ہیں اور فرسٹ ائیر سے فائنل ائیر کی اسٹوڈنٹس کو تاریخ پڑھاتی ہیں۔ یوں تو تمام اساتذہ عظیم ہوتے ہیں پر مس فرح ایک بہت باہمت ٹیچر ہیں جو دل کی آ نکھوں سے پڑھاتی ہیں۔

انکا کہنا تھا کہ جب وہ ۷ سال کی تھیں تو ٹائیفائیڈ کی وجہ سے انکی بینائی متاثر ہو گئی۔جسکی وجہ سے انکو بہت مشکلات کا سامنا ہوا لیکن انہوں نے ہمت نہیں ہاری۔مس فرح کو پڑھنے کا بہت شوق تھا۔ وہ جس اسکول میں تعلیم حاصل کررہی تھیں وہ ایک عام اسکول تھا جہاں بینائی سے محروم طالب علموں کے لئے سہولیات میّسرنہیں تھیں۔ جس کی وجہ سے انکو مشکل ہو تی لیکن پڑھائی کا شوق انکی ہمت بڑھاتا رہا۔جب وہ ۸ گریڈ میں تھی تو ان سے یہ کہا گیا کہ آ پ پڑھ کر کیا کرینگی۔

لیکن تب بھی گھر والوں کی ہر ممکن مدد کی وجہ سے انہوں نے میٹرک پاس کیا اسی طرح پھر انٹر اور پھر انکی ملاقات ایک ایسوسی ایشن سے کروائی جہاں انکی ملاقات دوسری لڑکیوں سے ہوئی جو بینائی سے محروم تھیں۔اِن کو دیکھ کر مس فرح اور زیادہ متاثر ہوئیں اور پھر کراچی یونیورسٹی سے ماسٹرز کیا۔

مس فرح نے ۱۹۹۰ میں رونق اسلام کالج میں پڑھانا شروع کیا۔شروعات میں وہ ۱۷ گریڈ کی لیکچرار تھیں اور اب وہ ۱۹ گریڈ کی آفیسر ہیں۔اور ساتھ ہی انجمنِ پاکستان برائے محرومیِ بینائی افراد کی ایجوکیشنل سیکریٹری بھی ہیں۔

انکا کہنا تھا کہ پڑھائی کے ساتھ وہ دوسری سرگرمیوں میں بھی حصّہ لیتی ہیں اور پھر ریڈیو پاکستان میں بھی نعت پڑھنے جایا کرتی ہیں اور ٹی وی کے بھی کافی پروگرامز میں حصّہ لے چکی ہیں۔

انکا کہنا ہے کہ اگر میں اپنی بینائی کی وجہ سے انتظار کرتی کہ کوئی میری مدد کر ے یا ہاتھ پکڑ ے تو آ ج میں اس مقام پر نہیں ہو تی،انسان کو خود کوشش کر نی چاہیے ہمت نہیں ہارنی چاہیے۔

انکا پیغام یہ ہے کہ اگر ہم میں کسی چیز کی کمی ہو تی ہے تو اس وجہ سے اپنے آپ کو نظر انداز مت کریں بلکہ انسان اپنی دوسری صلاحیتوں کی وجہ سے آ گے بڑھ سکتا ہے۔


Contributor: Sadaf Suleman

11 views

A Project by SIE in collaboration with KYI.

  • Facebook - White Circle
  • Twitter - White Circle
  • Instagram - White Circle